پاکستان اور کشمیر کے لیے اہم ترین دن (Video Report)

Read in your language:

پاکستان اور کشمیر کے لیے اہم ترین دن “یوم استحصال کشمی” دفتر خارجہ کی ریلی حکام کی توجہ سے محروم
وزیر خارجہ بلاول، وزیر مملکت حنا ربانی کھر ، چیئرمین کشمیر کمیٹی باسط بخاری، صدر مملکت عارف علوی شریک نہ ہوئے ترجمان دفتر خارجہ بھی ڈی چوک تک نہ پہنچ سکے

اگست 2019 کو، بھارت کی مودی کی قیادت والی حکومت نے ہندوستان کے زیر انتظام جموں و کشمیر کی خصوصی حیثیت کو غیر قانونی طور پر منسوخ کرکے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں اور بین الاقوامی قانون کی خلاف ورزی کی۔ اس کے بعد مودی سرکار نے چوتھے جنیوا کنونشن کے تحت مقبوضہ وادی کی آبادی کو تبدیل کرکے جنگی جرم کا ارتکاب کیا۔ ان کا خیال تھا کہ یہ اقدام کشمیریوں کی مزاحمت کے جذبے کو کچل دے گا۔ کچھ آزاد مبصرین کا کہنا ہے کہ “ایسا نہیں ہوا، حقیقت میں یہ بڑھ رہا ہے۔”

On 5th August 2019, India’s Modi-led govt violated UN Security Council’s resolutions and international law by illegally revoking Special Status of Indian-administered Jammu & Kashmir. Modi govt then moved to commit a war crime under the Fourth Geneva Convention by altering the demography of the occupied valley. They assumed the moves would crush spirit of Kashmiri resistance. “It did not happen, in fact it’s been growing,” some independent observers say.

RELATED FEATURED VIDEOS:


Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *